منگل. اکتوبر 22nd, 2019

بھارت : پیاز کی برآمد پر پابندی ، بنگلہ دیش میں پیاز کی قلت

ڈھاکہ (مانیٹرنگ ڈیسک) بنگلہ دیش میں بھارت کی جانب سے پیاز کی برآمد پر پابندی کے سبب پیاز کی قلت اور قیمتوں میں اضافہ کے باعث عوام میں وسیع پیمانے پر غم و غصہ پایا گیا ہے۔ بنگلہ دیش میں پیاز قومی کھانوں کے تقریباً تمام پہلوو¿ں میں استعمال ہوتا ہے۔ پیاز کی قیمت جنوبی ایشیاءمیں ایک حساس موضوع ہے۔پیاز کی طلب کا تقریباً دوتہائی حصہ بنگلہ دیشی کھانوں میں ایک لازمی جزو ہے، کاشتکار مقامی طور پر بھی اس کی کاشت کرتے ہیں جبکہ باقی ماندہ پڑوسی ملک بھارت سے درآمد کیا جاتا ہے تاہم مون سون کی شدید بارشوں نے فصل کو شدید نقصان پہنچایا ہے۔ بنگلہ دیش میں پیاز عام طور پر 30 ٹکا فی کلو فروخت کیا جا رہا تھا لیکن بھارت کی جانب سے پیاز کی برآمد پر پابندی عائد کرنے کے بعد اب اس کی قیمت 130 ٹکا فی کلو تک پہنچ گئی ہے۔عوام کے احتجاج کے بعد حکومت نے میانمار ، ترکی ، چین اور مصر سے سبزیوں کی درآمد کےلئے تیزی سے اقدامات شروع کر دیئے ہیں۔ بنگلہ دیش کی سرکاری ٹریڈنگ کارپوریشن دارالحکومت ڈھاکہ میں بھی پیاز فی کلوگرام 45 ٹکا فروخت کر رہی ہے لیکن 18 ملین آبادی والے شہر میں صرف 9 ہزار لوگوں کو سبسڈی والے نرخ میں سبزی خریدنے کی اجازت ہے اور ہر شخص 2کلو تک پیاز خرید سکتا ہے۔ٹی سی بی کے ترجمان ہمایوں کبیر نے بتایا کہ ہمارا مقصد کم آمدنی والے لوگوں کی مدد کرنا ہے ، اگرچہ درمیانی آمدنی والے لوگ بھی ہمارے ٹرکوں سے پیاز خرید رہے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Chat with us on WhatsApp