منگل. اکتوبر 22nd, 2019

زندگی میں کبھی ہیروئن نہیں دیکھی: رانا ثنا ءاللہ

لاہور (آن لائن) منشیات سمگلنگ کیس میں رانا ثنا اللہ کو عدالت پیش کیا گیا، عدالت نے ان کے جوڈیشل ریمانڈ میں 9 روز کی توسیع کرتے ہوئے 18 اکتوبر کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دے دیا۔ رانا ثنائاللہ کے خلاف منشیات سمگلنگ کیس کی سماعت ہوئی، سماعت کے دوران ملزم کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ ملزم کے خلاف بیگ کی برآمدگی اور خفیہ خانوں سے منشیات نکالنے کا کہا گیا ہے، یہ تمام سٹوری جھوٹی ہے۔ رانا ثنا اللہ نے بتایا کہ سیف سٹی کے ریکارڈ نے میرے مو قف کو درست ثابت کیا ہے کہ ٹول پلازہ پر کوئی کارروائی نہیں ہوئی، میں نے کبھی زندگی میں ہیروئن نہیں دیکھی، شہریار آفریدی کو قوم سے معافی مانگنی چاہیے۔لاہور میں انسداد منشیات کی خصوصی عدالت میں پیشی کے موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے مسلم لیگ نون کے رہنما رانا ثنا اللہ نے کہا کہ یہ لوگ بتائیں موقع پر کہاں برآمدگی ہوئی، ساری کارروائی تھانے جاکر فرضی کی گئی۔ رانا ثنا نے کہا کہ میں نے کبھی زندگی میں ہیروئن نہیں دیکھی، نہ کبھی سگریٹ پیا، خود یہ لوگ وزیر اعظم ہاﺅس میں بیٹھ کر نشے کرتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ مجھے سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے اور اگر کسی ادارے کے آفیشلز کسی سازش کا حصہ بنے ہیں تو یہ بدقسمتی ہے۔ایک سوال کے جواب میں نون لیگی رہنما رانا ثنااللہ نے بتایا کہ اطلاع ملی ہے پارٹی مولانا فضل الرحمن کے آزادی مارچ میں شرکت کرے گی، کارکن پارٹی کے فیصلے کی روشنی میں آزادی مارچ میں بھر پورشرکت کریں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Chat with us on WhatsApp